카테고리: Pakistan

جرائم کی روک تھام کیلئے دماغی امراض میں مبتلا مریضوں کی معاونت کا اعلان

mental-health-3337026_960_720

حال ہی میں، مہلک بیماریوں کے شکار مریضوں کے جرائم میں اضافے کی وجہ سے سنگین ذہنی امراض میں مبتلا مریضوں کیلئے منظم انتظام اور دیکھ بھال کے مطالبات میں بھی اضافہ ہو رہا ہے

ماہرین نے وضاحت کی ہے کہ سنگین دماغی بیماریوں میں مبتلا مریضوں کی صرف مناسب دیکھ بھال ہی کی جائے تو خود کو یا دوسروں کو نقصان پہنچانے کا خطرہ بہت کم ہو جاتا ہے. اس پر حکومت نے ایسے اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا ہے کہ جس کے تحت دماغی مریض بغیر کسی وقفے کے مسلسل علاج حاصل کر سکیں گے

٢٢ جولائی کو وزارت برائے صحت و فلاح کی جانب سے سنگین دماغی مریضوں کی سماجی طور پر معاونت کیلئے  کا اعلان کیا

ایک ایسا نظام متعارف کروایا جائے گا جس کے تحت ہسپتال سے چھٹی کے وقت مریض کی رضا مندی نہ ہونے کے باوجود بھی مقامی مینٹل ہیلتھ ویلفیئر سینٹر کو مریض کی ہسپتال سے چھٹی کی اطلاع دی جائے گی

اس کے علاوہ، نفسیاتی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کی صلاحیتوں پر غور اور سماج میں نفسیاتی مریضوں کی دیکھ بھال اور مینٹل ہیلتھ سینٹر کی بنیاد کو مضبوط بنانے کا کام کیا جائے گا

Continue reading “جرائم کی روک تھام کیلئے دماغی امراض میں مبتلا مریضوں کی معاونت کا اعلان”

ایک ہی ہفتے میں گرمی کی شدید لہر کی وجہ سے ١١٩ کو تین گنا سے زائد کالز موصول

beach-3444038_960_720

قبل از وقت گرمی کی لہر کی وجہ سے ایمرجنسی صورت حال سے نمٹنے کیلئے ایمبولینس کے استعمال میں اچانک اضافہ دیکھنے میں آیا ہے

فائر ڈیپارٹمنٹ کے مطابق ١١ جولائی سے ١٦ جولائی تک درجہ حرارت اچانک بڑھ جانے کی وجہ سے ١١٩ پر ١٧٧ فون کالز موصول ہوئیں جبکہ گزشتہ برس اس دورانیہ میں صرف ٦٠ کالز موصول ہوئی تھیں

فائر ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے دن کے وقت بھر نکلنے سے پرہیز کرنے اور ایمرجنسی کی صورت میں فوراً ١١٩ پر رابطہ کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں Continue reading “ایک ہی ہفتے میں گرمی کی شدید لہر کی وجہ سے ١١٩ کو تین گنا سے زائد کالز موصول”

بحری پولیس ایجنسی، انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرنے والے ٥٦ افراد گرفتار

sailing-690289_960_720

بحری پولیس نے انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرنے والے بھری جہاز کے عملے جیسا کہ کپتان وغیرہ کو حراست میں لیا جو کہ نا اختوں پر تشدّد، غیر ادا شدہ اجرت اور نااختوں کو قید کر کے رکھنے جیسے عوامل میں ملوث تھے

١٩ جولائی کو بحری پولیس ایجنسی نے بیان کیا کہ ٣٠ جولائی تک پورے ملک میں ماہی گیری کیلئے استعمال ہونے والے جہازوں، کھاری دلدل اور مچھلی فرموں پر کام کرنے والے بحری اختوں کے انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے حوالے سے کل ٨٣٠٠٠ جگہوں کا دورہ کیا جس کے نتیجے میں ٥٦ افراد کو گرفتار کیا گیا جبکہ ان میں سے ایک شخص کو بحری نا اخت کو قید کر کے رکھنے کے جرم میں گرفتارہونے والے شخص کو جیل بھیج دیا گیا

جیل جانے والے شخص نے دماغی معذوری کے شکار شخص کو دیکھ بھال اور کام کا لالچ دے کر اپنے پاس رکھا لکن آٹھ سال کی اجرت جو کہ تقریباً ١٠ کروڑ وان ہے بھی ادا نہیں کی بلکہ مسلسل تشدّد کرتا رہا

جبکہ اںچھون میں ایک بحری جہاز کے کپتان نے ویتنامی نا اخت کو کورین زبان معلوم نہ ہونے اور کام میں سست ہونے کی وجہ سے سمندر میں پھینک دیا Continue reading “بحری پولیس ایجنسی، انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرنے والے ٥٦ افراد گرفتار”

دونگدیمن ہسٹری اینڈ کلچر پارک سٹیشن، ١٨ جولائی سے لائن نمبر پانچ ٹرانزٹ گزرگاہ بند

1

دونگدیمن ہسٹری اینڈ کلچر پارک سٹیشن میں پانچ نمبر لائن پر منتقل ہونے کیلئے استعمال ہونے والی گزرگاہ کو ١٨ جولائی سے ٣١ اکتوبر تک عارضی طور پر بند کرنے کا اعلان کیا گیا ہے

گزرگاہ کو بند کرنے کی وجہ پرانی رواں زینہ سیڑھیوں کی تبدیلی ہے

گزشتہ برس دونگدیمن ہسٹری اینڈ کلچر پارک سٹیشن سے دوسری لائن پر ٹرانسفر لینے والے کل مسافروں کی تعداد دو لاکھ نوے ہزار تھی جبکہ ہفتے کے دنوں میں لائن نمبر پانچ، دو اور چار سے ٹرانسفر کرنے والی مسافرین کی فی دن اوسط تعداد ایک لاکھ تئیس ہزار افراد تھی

لائن نمبر ٢ اور ٥ کے درمیان ٹرانزٹ اُلجِرو ٤-گا سٹیشن یا وانگشمنی سٹیشن سے کیا جا سکے گا، لائن نمبر ٤ اور پانچ کے درمیان ٹرانزٹ کی صورت میں قریبی اسٹیشنز سے لائن نمبر ٢ یا ٣ پر ٹرانسفر کرنے کے بعد ایک بار پھر ٹرانسفر کرنا لازمی ہے جس کی وجہ سے پہلے کی نسبت تقریباً ١٣ منٹ زیادہ سفر کرنا پڑے گا

Continue reading “دونگدیمن ہسٹری اینڈ کلچر پارک سٹیشن، ١٨ جولائی سے لائن نمبر پانچ ٹرانزٹ گزرگاہ بند”

اگلے برس سے فی گھنٹہ کم از کم اجرت ٨٣٥٠ ا وان، ١٠.٩ فیصد اضافہ

money-2696235_960_720

اگلے سال سے کم از کم فی گھنٹہ اجرت کو رواں برس کے مقابلے ١٠.٩ فیصد کے اضافے سے ٨٣٥٠ وان تک بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے

١٤ جولائی کو کم از کم تنخواہ کونسل کے ستائیس ممبران اور لیبر کونسل کے ١٤ ممبران کی موجودگی میں یہ فیصلہ کیا گیا

جبکہ ١٣ جولائی کی شام کو آجروں کی تنظیم نے احتجاج کرتے ہوئے اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا اور کم از کم اجرت میں اضافے کے خلاف اپنا احتجاج ریکارڈ کروایا

آدھی رات تک جاری رہنے والے مذاکرات کے بعد ٨٣٥٠ کے حق میں آٹھ ووٹ اور ٨٦٨٠ کی طرف چھ ووٹ گرے

اگلے سال کی فی گھنٹہ کم از کم اجرت کا حتمی فیصلہ اور اعلان ٥ اگست کو وزیر برائے لبر و ملازمت کی جانب سے کیا جائے گا

تاہم اگر تاجر تنظیم یا لیبر تنظیم کی جانب سے اس فیصلہ کے خلاف اعتراضات ظاہر کے جاتے ہیں تو اس صورت حال میں کم از کم اجرت کے فیصلے پر دوبارہ غور کی درخواست بھی دی جا سکتی ہے

Continue reading “اگلے برس سے فی گھنٹہ کم از کم اجرت ٨٣٥٠ ا وان، ١٠.٩ فیصد اضافہ”

ایک ہفتے میں ٥٢ گھنٹے کام، کام کا وقت نا گزیر الجھن

brake-1198862_960_720

یکم جولائی سے ایک ہفتے میں ٥٢ گھنٹے کام کے نظام کو لاگو کیا جا رہا ہے جس کہ تحت ایسے دفاتر جہاں بیک وقت میں ٣٠٠ سے زائد افراد کام کرتے ہیں، ان کے کام کے اوقات کو ہفتہ وار ٥٢ گھنٹے تک محدود کر دیا گیا ہے

کام کے اوقات کو محدود کرنے کی سب سے بڑی وجہ غیر معقول اوور ٹائم کو ختم کرنا ہے. کام کے اوقات کو ہفتے کے دنوں میں ٤٠ گھنٹے اور ہفتے کے اختتام یا چھٹیوں میں ١٢ گھنٹے تک محدود کر دیا گیا ہے. یہاں تک کہ اگر آپ کام کی جگہ پر مقررہ وقت سے پہلے پہنچتے ہیں یا وہاں سے لیٹ نکلتے ہیں پھر بھی اضافی وقت کو کام کے گھنٹوں میں شمار نہیں کیا جائے گا جن تک کہ انچارج کی جانب سے اجازت نہ لے لی جائے

کام کے سلسلے میں بیرون ملک جانے کی صورت میں کام کے وقت کو کام کے اوقات میں شامل کیا جائے گا لیکن اندروں ملک کام کے سلسلے میں شہر سے باہر جانے کی صورت میں فاصلے کے حساب سے کام کے اوقات میں شمار کئے جانے کا فیصلہ کمپنی کی جانب سے کیا جائے گا، جو کہ مختلف کمپنیوں کے ساتھ مختلف ہو سکتا ہے.

Continue reading “ایک ہفتے میں ٥٢ گھنٹے کام، کام کا وقت نا گزیر الجھن”

غیر اطمینان بخش حفاظتی معیار کی بنا پر ٢٦ مصنوعات کی خرید و فروخت پر پابندی

888

٩ جولائی کو وزارت برائے تجارت، صنعت و توانائی اور نیشنل ایجنسی برائے ٹیکنالوجی و سٹینڈرڈ نے بچوں کے استعمال کی مصنوعات، روز مرہ کے استعمال اور بجلی کی مصنوعات جیسی ٣٧ اقسام کی ٨٦٦ مصنوعات کے حفاظتی معیار کا جائزہ لیا، جس کے نتیجے میں ٢٣ کمپنیوں کی کل ٢٦ مصنوعات کی خرید و فروخت پر پابندی عائد کرنے کے ساتھ ساتھ فروخت شدہ مصنوعات کی بھی واپسی کے اقدامات جاری کئے گئے ہیں

بچوں کے استعمال کی مصنوعات میں جیولری، کپڑے اور فرنیچر وغیرہ جیسی ٦ مصنوعات کی وجہ سے شوپن برانڈ کے بوٹ اور برساتی کے اجزاء میں کیڈمیم نامی کیمیائی عنصر کے حد سے زیادہ استعمال کی وجہ سے خرید و فروخت پر پابندی لگائی گئی ہے. جبکہ جائزہ کے مطابق اللوم فرنیچر کی جانب سے تیار کردہ پانچ درازوں پر مبنی ڈریسر کے آسانی سے ٹوٹ کر گرنے کے خدشات کی بنیاد پر پابندی عائد کی گئی

اس کے علاوہ تکنیکی وجوہات کے باعث ١٧ برقی مصنوعات جبکہ ہائیڈروجن آئن کے حفاظتی معیار کی خلاف ورزی کرنے والی ٣ ملبوسات کی مصنوعات کے استعمال سے بھی منع کیا گیا ہے

نیشنل ایجنسی برائے ٹیکنالوجی و سٹینڈرڈ نے آفیشل ویب سائٹ پر ممنوع شدہ مصنوعات کی فہرست جاری کی ہے اور ان مصنوعات کی آن لائن خرید و فروخت کو روکنے کے لئے بھی کاوشیں کی جا رہی ہیں

Continue reading “غیر اطمینان بخش حفاظتی معیار کی بنا پر ٢٦ مصنوعات کی خرید و فروخت پر پابندی”