مہاجر خواتین، می ٹو- مہاجر خواتین کا اپنے ساتھ پیش آنے والے واقعات کا اظہار

IMG_6561-1024x683

مہاجرخواتین بڑی تعداد میں “می ٹو” کی قطار میں شامل ہوئیں
نو مارچ کو قومی اسمبلی میں مہاجر خواتین کیلئے، ان کے ساتھ پیش آنے والے حادثات کے اظہار پرمبنی ایک تقریب کا انقعاد ہوا
بہنوئی کے ہاتھوں جنسی طور پر ہراساں ہونے کے واقعات،  خاوند کی جانب سے نہ پسندیدہ طرز کے جنسی تعلقات کیلئے مجبور کئے جانے کے واقعات وغیرہ منظر عام پر آئے، کسی کگا سے کام چھوڑنے کی صورت میں رجسٹرڈ شدہ شناخت کا غیر رجسٹرڈ شناخت میں تبدیل ہو جانا جیسے ورک پرمٹ سسٹم کے ضوابط وغیرہ جیسے ساختی مسائل کی بھی نشاندہی کی گئی
ایونٹ ہال میں موجود تقریب کے شرکاء نے مہاجرخواتین کیساتھ ہونے والے جنسی تشدّد اور اس سے ہونے والے نقصانات کا سروے اور علاج کی فراہمی، نقصان اٹھانے والی خواتین کے کوریا میں قیام کی ضمانت، تشدّد کی شکایت درج ہونے کی صورت میں فوری کام کرنے کی جگہ کی تبدیلی، ہوسٹلز کی ترتیب، جنسی ہراسیات کی روک تھام کےلئے بنیادی تعلیم لازم قراراور مقامی لوگوں کیلئے زوجہ کے انسانی حقوق کے بارے میں تعلیم کی فراہمی جیسے اقدامات کا مطالبہ پیش کیا

<‘이주여성 미투’ 사례발표회 열려>

이주민 여성들이 ‘미투'(#MeToo) 대열에 가세했다.

3월9일, 국회의원회관에서 ‘이주여성들의 미투(Me Too)’ 사례 발표회가 열렸다.

형부에게 성추행당한 사례, 남편에게 원치 않는 성관계를 강요받는 사례 등이 나왔고, 사업장을 이탈하면 미등록 신분이 되는 고용허가제 규정 등 구조적인 문제점도 지적됐다.

행사장에서 ‘이주여성 미투 참가자 일동’은 이주여성 성폭력 피해 실태조사와 의료 지원, 피해 이주여성 체류 보장, 성폭력 피해 신고 즉시 사업장 변경, 기숙사 기준 마련, 성희롱 예방교육 의무화, 선주민 배우자 인권 교육 등 요구 사항을 낭독했다.

답글 남기기

아래 항목을 채우거나 오른쪽 아이콘 중 하나를 클릭하여 로그 인 하세요:

WordPress.com 로고

WordPress.com의 계정을 사용하여 댓글을 남깁니다. 로그아웃 /  변경 )

Google+ photo

Google+의 계정을 사용하여 댓글을 남깁니다. 로그아웃 /  변경 )

Twitter 사진

Twitter의 계정을 사용하여 댓글을 남깁니다. 로그아웃 /  변경 )

Facebook 사진

Facebook의 계정을 사용하여 댓글을 남깁니다. 로그아웃 /  변경 )

%s에 연결하는 중